Aalmi Majlis Tahaffuz Khatm e nubuwwat عالمی مجلس تحفّظ ختم ن

Aalmi Majlis Tahaffuz Khatm e nubuwwat عالمی مجلس تحفّظ ختم ن

Comments

تاج و تخت ختم نبوت۔۔۔ زندہ باد
#Important
Steps:
1: go to google.
2: search (Present khalifa of Islam)
3: click on (feed back)
4: report (this is misleading or inaccurate)

#hurry_up_report_against_wikipedia
#make_it_trend
#share_it
plz share it
Asalam o Alikum
سالانہ ختم نبوت کانفرنس سفید ڈھیری پشاور کے وال چاکنگ کا منظر

Markaz Aalmi majlis tahaffuz khatm e nabuwwat peshawar

Operating as usual

[01/28/21]   *** پہلے شہید ختم نبوت سیدنا حبيب بن زید رضی اللہ تعالٰی عنہ ***

سیدنا امّ عمارہ رضی اللہ عنہ کے لخت جگر سیدنا حبيب بن زید ؓ وہ ؓجلیل القدر صحابی اور رہتی دنیا تک کارکنان ختم نبوّتﷺ کے ماتھے کاجھومر ہیں جنہیں یہ اعزاز حاصل ہے کہ یہ وہ پہلی شخصیت ہیں جنہیں نبی کریم ﷺ کی رسالت کے ایک ایسے اہم ترین جزو جو خالص نبی کریم ﷺ کی ذات سے جڑا ہوا ہے یعنی عقیدہ ختم نبوت کے نام پر شہادت کے رتبہ پر فائز ہونے کی سعادت کریمہ حاصل ہے !

سیدنا حبیب بن زید ؓ جب رسول اللہﷺ کا خط( جو سرکار دوعالم نے مسیلمہ کو سخت جواب کی صورت میں دیا تھا) لیکر بدنام زمانہ ملعون مسیلمہ کذاب (عہد رسالتﷺ میں ہی نبوّت کا دعویٰ کرنے والا ) کی طرف گئے تو اس ملعون نے خط پڑھ کر غصے میں حضرت کو گرفتار کر لیا ، اسے پتہ چلا کہ یہ صحابی نبی کریمﷺ کو اللہ کا آخری نبی مانتے ہیں تو مسیلمہ کذاب نے ان سے سوال کیا کہ "کیا تم نبی کریمﷺ کو رسول مانتے ہو ؟" سیدنا حبيب بن زید ؓ نے جواب دیا کہ ہاں میں نبی کریمﷺ کو اللہ کا آخری نبی مانتا ہوں . (مفہوم)
جس پر مسیلمہ نے دوسرا سوال کیا کہ " کیا تم مجھے رسول مانتے ہو ؟ (قربان جاؤں صحابہ کی فراست پر کہ جنہیں نبی کریمﷺ کی عظمت کی خوب جانچ ہے ۔ یہاں جواب بنتا تھا کہ" نہیں میں تجھے نہیں مانتا" صحابہ کی غیرت کو دیکھیں انہوں نے گوارا ہی نہیں کیا کہ وہ اس بات کا ایسا جواب دے دیں جس سے مسیلمہ ملعون سمجھے کہ صحابی نے میرا گستاخانہ سوال سمجھ لیا ہے)
سیدنا حبيب بن زید ؓ نے جواب دیا کہ "تو جو بکواس کرتا ہے میرے کان اسے سننے سے قاصر ہیں "(مفہوم) جس پر مسیلمہ کذاب کو غصہ آیا اور اس نے حضرت کا ایک ہاتھ کٹوا دیا اسی طرح مسیلمہ کذاب نے پھر نبی کریمﷺ کے بارے میں سوال کیا سیدنا حبيب بن زید ؓ سے کہ وہ نبی کریمﷺ کو اللہ کا رسول مانتے ہیں حضرت نے بلکل وہی مثبت جواب دیا پھر جب اسی انداز میں ملعون مسیلمہ نے اپنے بارے میں سوال کیا تو حضرت نے اسی طرح جواب دیا کہ "تو جو بکواس کرتا ہے میرے کان اسے سننے سے قاصر ہیں (مفہوم)" مسیلمہ کذاب نے غصے میں حضرت کا دوسرا ہاتھ بھی کٹوادیا۔ مسیلمہ مسلسل غصے میں سوال کرتا رہا اور حضرت مسلسل اس کو غیرت رسولﷺ پر مبنی یہی جواب دیتے رہے یہاں تک سیدنا حبیب بن زید ؓ کے جسم کے ٹکڑے ٹکڑے ہو گئے اور حضرت شہید ہوگئے ۔
(یہاں ایک مسئلہ اور واضح ہو گیا کہ اسلام میں جان بچانا فرض ہے چاہے کچھ بھی ہو جائے مگر بات جب نبی کریم ﷺ کی عزت و عظمت آپ ﷺ کی ختم نبوت کی ہو گی تب جان بچانے کا فرض حکم بھی ختم ہے یہ قرآن پاک کی آیت "النبی اولی بالمؤمنین انفسھم" کی علی الاعلان ترجمانی ہے)
نبی کریمﷺ کی عزت و عظمت آپ ﷺ کی ختم نبوت کا تحفظ کرنے والے عہد وفا کے اس قافلے کے سالار سیدنا حبيب بن زید ؓ نے اپنی شہادت دیکر آنے والی امت کو یہ بتا دیا ہے کہ وقت آنے پر جسم کے ٹکڑے ٹکڑے تو ہو سکتے ہیں مگر کوئی ایسا عمل ہر گز برداشت نہیں کیا جائے گا جو حرمت پر رسول پر آنچ آنے کی مشابہت بھی رکھتاہو ،،، ( دور حاضر میں آپ ﷺ کی ختم نبوت پر ڈاکہ مارنے کی ناپاک جسارت کرنے والوں میں دیگر فتنوں میں بڑا فتنہ قادیانیت کا ہے جس کے شب و روز نبی کریم ﷺ کی ختم نبوت کی مخالفت میں گزر رہے ہیں ... فتنہ قادیانیت کا تعاقب ہر کلمہ گو کا اوّلین فریضہ ہے)
اللہ تعالیٰ ہمیں صحابہ کرام کی سچی محبت نصیب فرمائے اور انکے نقش قدم پر چلنے کی توفیق عطا فرمائے ہمیں اس محبت کا حصہ عطاء فرما دے جو رب تعالیٰ نے صحابہ کرام رضوان اللہ علیہم اجمعین کو نبی کریم ﷺ کے لیے عطاء کی ہے۔
آمین بجاہ النبی الکریم ﷺ

[01/25/21]   آسمان کے نیچے بدترین مخلوق : ✍️

قادیانیوں کے ساتھ جب بھی گفتگو ہوتی ہے ، تو مرزا قادیانی کے دفاع میں قادیانی مرزائی جہاں بہت سی بےتکی باتیں کرتے ہیں ، وہاں ان قادیانیوں کی زبان اہل اسلام کے علمائے کرام کے لئے یہ کہتے ہوئے نہیں تھکتی ، کہ معاذاللہ یہ لوگ ( یعنی علماء اہل اسلام) آسمان کے نیچے بدترین مخلوق ہیں ۔ مگر حقیقت اس کے برعکس کچھ اور ہی ہے ، اور وہ یہ ہے ، کہ :
آسمان کے نیچے بدترین مخلوق تو (ملعون مرزا قادیانی) تھا ، جس نے سر سید احمد خان کی پیروی کرتے ہوئے ، جھوٹا دعویٰ مسیحیت کیا ، جس نے قرآن کریم اور احادیث مبارکہ پر تحریف کرتے ہوئے ، اپنے لئے ظلی بروزی جھوٹی نبوت کا دعویٰ کیا ، جس نے محمدی بیگم سے آسمانی نکاح کا دعویٰ کیا ، اور زمینی حقائق کی بنیاد پر اس شریف زادی کو بیاہ کر مرزا سلطان محمد صاحب لے گئے ، آسمان کے نیچے بدترین مخلوق تو مرزا قادیانی تھا ، جس نے پادری آتھم کے مرنے کی پیشگوئی کی تھی ، مگر وہ مقررہ مدت کے باوجود زمین پر زندہ سلامت رہ کر مرزا قادیانی کی پیشگوئی کا منہ چڑاتا رہا ، آسمان کے نیچے بدترین مخلوق تو مرزا قادیانی تھا ، جس نے حمایت اسلام کے لئے پچاس کتابیں لکھنے کا وعدہ کرکے لوگوں سے پیسے بٹورے اور پھر پچاس اور پانچ میں ایک صفر کا فرق بتا کر باقی پنتالیس کتابوں کی رقم ہڑپ کر گیا ، آسمان کے نیچے بدترین مخلوق تو وہ ملعون مرزا قادیانی تھا ، جس نے اپنی دوسری شادی کے موقع پر یہ اقرار کیا کہ وہ نامرد ہے، (مرزا قادیانی کو جب یہ معلوم تھا ، کہ وہ نامرد ہے، تو پھر شادی کس چکر میں کی تھی؟) آسمان کے نیچے بدترین مخلوق تو ملعون مرزا قادیانی تھا، جس نے حضرت عیسیٰ علیہ السلام کو گالیاں دیں، اور معصوم انبیاء کرام علیہم السلام کی ہمسری کی، آسمان کے نیچے بدترین مخلوق تو (مرزا قادیانی) تھا، جس نے مسلمانوں کو گالیاں دیں، آسمان کے نیچے بدترین مخلوق تو قادیانی ہیں، جو مرزا قادیانی کے جھوٹے دعووں اور پیشگوئیوں کو جانتے ہوئے بھی اس کے دفاع میں انبیاء کرام علیہم السلام پر بھونکتے ہیں، اور مرزا قادیانی کے کردار پر بات کرنے سے شرماتے اور گھبراتے ہیں، آسمان کے نیچے بدترین مخلوق تو مرزا قادیانی کے وہ نام نہاد خلیفے ہیں، جن کے کردار کی شرم ناکیاں آج بھی زبان زدِ عام ہیں، یہی وہ باتیں تھیں اور ہیں جن کو دیکھ کر محترم شفیق مرزا صاحب مرحوم (سابق قادیانی) قادیانیت چھوڑ کر مسلمان ہوئے، اور "شہر سدوم" کے نام سے قادیانی مکروہ چہرے کی حقیقت لکھ گئے، اور آج بھی جن سعید روحوں کو قادیانیت کی حقیقت آشکار ہو رہی ہے، ایسے نیک لوگ ضمیر کی آواز پر لبیک کہ کر مسلمان ہو رہے ہیں، اور وہ لوگ جو مرزا قادیانی اور قادیانی خلیفوں کی حقیقت جان کر بھی، محض مادی دنیا کے لئے قادیانیت سے چپکے ہوئے ہیں، یہ وہ لوگ ہیں، جو درحقیقت آسمان کے نیچے بدترین مخلوق ہیں۔

[12/21/20]   آجکل قادیانیوں کو اپنے خلیفوں کا تعارف کروانے کا بہت شوق چڑھا ھوا ھے میں نے سوچا کہ میں ان کے اس شوق کو بھرپور طریقے سے پورا کروں گا..

ایک بات میں چیلنج سے کہوں گا کہ اگر میری دی گئی معلومات میں سے ایک فقرہ بھی جھوٹ ثابت ھوا تو میں لکھنا چھوڑ دوں گا. قادیانیت شیطانیت پر میں نے پی ایچ ڈی کر رکھی ہے .. میں نے ھر جگہ لفظ خلیفہ کی جگہ شیطان لکھا ھے. اس لیے آپ خود ہی درست جگہ درست لفظ سمجھ لیجیے..

مجھے یہ شیئر کرنے کی ضرورت کیوں پیش آئی ہے ھوا کچھ یوں ہے کہ کچھ روز سے ان کے پانچویں خلیفے کا تعارف پیش کیا جا رہا ہے. بعض معصوم بہن بھائی جن کا اس معاملے میں نالج اتنا زیادہ نہیں ہے وہ سمجھتے ہیں اور اس بات پر دکھی ھو جاتے ہیں کہ شاید یہ بدبخت قادیانی ھمارے چار خلفائے راشدین کے بعد پانچواں اپنا خلیفہ پیش کر رہے ہیں ایسا بالکل نہیں ہے ان کے ھاں مرزا گلام قادیانی کے جہنم واصل ھونے کے بعد کچھ شیاطین آئے تھے جنہیں یہ مردود خلیفہ کہتے ہیں ان کے چار شیاطین گزر چکے ہیں پانچواں بھی گزرنے والا ہے اور چھٹا پائپ لائن میں ھے.. پہلا شیطان : مرزا غلام قادیانی ملعون کے جہنم رسید ہونے کے بعد اس کا پہلا خلیفہ ، حكيم نور الدين تھا. وہ ایک ایسا غلیظ المزاج اور بدبودار شخص تھا کہ مدتوں تک نہ نہاتا تھا اور نہ ہی اپنے بال اور ناخن تراشتا تھا.

ایک دن یہ بدبخت شخص گھوڑے پر سوار ہو کے نکلا تو گھوڑا بدکنے پرگرتے ہوئے اپنا ایک پاؤں گھوڑے کی رکاب میں پھنسا بیٹھا. اور پھر وہ پاؤں رکاب میں پھنسا رہا اور گھوڑا سرپٹ دوڑتا ہوا اس خبیث کو گھسیٹتا اور اس کی ہڈیاں چٹخاتا رہا. اس ہنگامہ میں نامراد خلیفہ زندہ تو بچ گیا مگر قدرت کو اس منکر ِختم نبوت کی عبرت ناک موت زمانے کو دکھانا منظور تھا.

زخم ناسور کی شکل اختیار کر کے پہلے طویل اذیت اور بعد ازاں جان لیوا ثابت ہوئے،تمام قادیانی حکیم اور ان کے سرپرست انگریز ڈاکٹرز بھی اس بدبخت کا علاج کرنے میں ناکام رہے. اور یوں مرزا قادیانی کا پہلا جانشین ، ملعون قادیانی خلیفہ اول بستر ِمرگ پرانتہائ دردناک حالت میں ایڑیاں رگڑتے رگڑتے ، اپنے کاذب نبی کے ٹھکانہ ہاویہ کو سدھار گیا.

دوسرا شیطان . : حکیم نورالدین کے اس انجام کے بعد ممکنہ جانشین مولوی محمد علی لاہوری کو خلافت نہ ملی،ملعون مرزا قادیانی کی بیوی نے اپنے بیٹے مرزا بشیرالدین محمود کو زبردستی خلیفہ بنوادیا.

اکھنڈ بھارت کا خواب دیکھنے والا یہ بدترین گستاخ ِ قرآن و رسالت خلیفہ ، ناجائز تعلقات کا دلدادہ اور انتہائی عیاش نوجوان تھا. اسے خلافت ملنے پر مرزا قادیانی کے وفادار ساتھی مولوی محمد علی لاہوری نے جماعت ِ قادیان چھوڑ کر اپنا لاہوری مرزائی فرقہ بنالیا.

شیطان مرزا بشیر نے خلیفہ بنتے ہی ایسی گھناؤنی حرکتیں کی کہ خود شرم بھی شرما گئی. اس کی قصرِ خلافت نامی رہائش گاہ دراصل قصرِ فحاشی وجرائم تھی. ربوہ کے اس عمارت میں اس خبیث نے نہ صرف قادیانی نوجوان لڑکیوں کی عصمت دری کی بلکہ "اس کی اپنی گیارہ سالہ بیٹی امت الرشید بھی اس کی شیطانی ہوس سے محفوظ نہ رہی” .

شیطان ثانی کی زندگی کا خاتمہ بھی ایسے دردناک حالت میں ہوا کہ اس فالج زدہ ابلیس کو زندگی کے آخری بارہ سال ایڑیاں رگڑتے اور مرتے دیکھ کر قادیانی بھی کانوں کو ہاتھ لگاتے تھے. اس ملعون کی شکل و صورت پاگلوں کی سی بن چکی تھی اور وہ سر ہلاتا اور منہ میں کچھ منمیناتا رہتا تھا. اکثر یہ مجنون اپنے بال اور داڑھی نوچتا رہتا اور اپنی ہی نجاست ہاتھ و منہ پر مل لیا کرتا تھا بہت سارے لوگ ان سب غلاظت آلودہ حالات و واقعات کے عینی شاہد ہیں ایک عرصے تک بستر مرگ پر ایسی اذیت ناک زندگی گزارنے کے بعد جب یہ گستاخِ قرآن و رسالت جہنم کو سدھارا تو اس کا جسم بھی عبرت کا اک عجیب نمونہ تھا. ایک لمبے عرصے تک بسترِمرگ پر رہنے کی وجہ سے لاش مرغ کے روسٹ ہوئے چرغے کی طرح اس قدر اکڑ چکی تھی کہ ٹانگوں کو رسیوں سے باندھ کر بمشکل سیدھا کیاگیا. چہرےپر پڑی سیاہیاں اورافلاکی لعنتیں چھپانے کے لئے لاش کا خصوصی میک اپ کروایا گیا. اور پھر عوام الناس کو دھوکہ دینے کے لیے مرکری بلب کی تیز روشنی میں لاش کو اس طرح رکھا گیا کہ چہرے پر لعنت زدہ سیاہی نظر نہ آئے،لیکن تمام قادیانی تو ساری اصل حقیقت سے آشنا تھے.

تیسرا شیطان : مرزا بشیرالدین محمود کی عبرت ناک انجام کے بعد وراثت اور قادیانی گروہ سے جبری چندوں کے نام نہاد خلافت مافیا کا روایتی کرپشن سلسلہ جاری رکھنے کی خاطر اسی کابڑا بیٹا ، ‘مرزاناصر احمد’ گدی نشین ہوا . یہ عیاش خلیفہ اپنی عمر ِ نوجوانی ہی سے گھوڑوں کی ریس اور جوّا بازی کا شوقین ہونے کے ساتھ ساتھ معاشقوں کا بھی انتہائی دلدادہ تھا . شراب و شباب کی طلب اور جنسی ہوس اسے اپنے دادا ملعون مرزا غلام احمق قادیانی اور باپ سے وراثت میں ملی. اس کے گھڑ سواری کے شہنشاہی شوق نے ربوہ میں گھڑ دوڑ کے دوران ایک غریب کی جان بھی لی .

اس ہوس رسیدہ و شہوت پرست شیطان نے اڑسٹھ سال کی عمر میں فاطمہ جناح میڈیکل کالج کی ایک ستائیس سالہ نوجوان قادیانی طالبہ کو یہ خلافتی فرمان جاری کرتے ہوئے اپنے عقد میں لےلیا تھا کہ "آج یہ مقدس دولہا اپنا نکاح خود پڑھائے گا ” اور پھر وہی ہوا جس کا خدشہ خود قادیانی مرکزی قیادت کو بھی تھا. خود سے چوالیس برس چھوٹی خوبرو بیوی سے ازدواجی تعلقات میں کلی طور پر ناکام ٹھہرنے کے بعد بوڑھے دولہا نے مجبوراً دیسی کشتوں کا بےدریغ استعمال شروع کردیا کشتوں کے ری ایکشن کی وجہ سے مرنے سے پہلے اس قادیانی کا جسم پھول کر کُپّا ہوگیا تھا سونے اور چاندی کے کشتوں کا زہریلے ناگ نے اس خبیث کو ایسے ڈسا کہ کہ یہ زندیق ، مختصر عرصے میں کشتوں ہی کی زہریلی آگ میں جھلس کر اپنے باپ دادا کے پاس جہنم سدھار گیا.

چوتھا شیطان : مرزا ناصر احمد کی موت کے بعد ‘مرزا طاہر’ احمد گدی نشین ہوا تو اس کاسوتیلا بھائی مرزا رفیع احمد خلافت کو اپنا حق سمجھتے ہوئے میدان میں آگیا . جب اس کی بات نہ مانی گئی تو وہ اپنے حواریوں کے ساتھ سڑکوں پر آگیا. یہ چوتھا شیطان انتہائی آمرانہ مزاج کا حامل تھا. اس کی فرعونی عادات و اطوار نے نہ صرف اسے ، بلکہ پوری قادیانی جماعت کو دنیا بھر میں ذلیل و خوار کیا. اپنی زبان درازی کی وجہ سے وہ پاکستان سے بھاگ کر لندن میں اپنے گورے آقاؤں کے ہاں پناہ گزین ہوا. اس کے دور میں غیر تو کیا کسی قادیانی کی بھی عزت محفوظ نہیں تھی. اس نے نظریں ملا کر بات نہ کرنے کا حکم دے رکھا تھا.

‘مرزا طاہر’ ہومیوپیتھک ڈاکٹر کہلوانے کا شوقین تھا. مرزا طاہر کی خواہش تھی کہ قادیانی عورتیں صرف لڑکے ہی پیدا کریں ، جن میں ذات پات یا نسل کا کوئی لحاظ نہ ہو . ڈاکٹر مرزا طاہر قادیانیوں کو "نر نسل” پیدا کرنے کی گولیاں تو دیتا رہا مگر اپنی بیوی کو لڑکا نہ دے سکااور اس کے ہاں تین بیٹیاں پیدا ہوئںں .

اس نیم پاگل شیطان کے ذہنی توازن کا یہ حال تھا کہ امامت کے دوران عجیب و غریب حرکتیں کرتا تھا ، کھبی باوضو تو کھبی بے وضو ہی نماز پڑھادیتا. رکوع کی جگہ سجدہ اور سجدہ کی جگہ رکوع اور کھبی دوران ِ نماز ہی یہ کہتے ہوئے گھر کو چلتا تھا کہ ٹھہرو ، میں ابھی وضو کر کے آتا ہوں . غرض یہ کہ اپنے پیشرؤں کی طرح مرزا طاہر کی بھی بڑی مشکل سے جان نکلی. پرستاروں کے دیدار کے لئے جب لاش رکھی گئی تو چہرہ سیاہ ہونے کے ساتھ ساتھ لاش سے اچانک ایسا بدبودار تعفن اٹھا کہ پرستاروں کو فوراً کمرے سے باہر نکال دیا گیا اور لاش بند کرکے تدفین کے لئے روانہ کردی گئی.

پانچواں شیطان : مرزا طاہر کی موت کے بعد قادیانیوں کا موجودہ ، "مرزا مسرور” نیا شیطان بنا . اس کا ذاتی کردار تو بالکل ویسا ہی ہے جیسا پہلے شیطانوں کا تھا لیکن اس نے نیا کام کیا ھے کہ پانامہ میں بھی اپنا نام شامل کر چکا ہے .

معلوم یہ ھوا ھے کہ پاناما اسکینڈلز کی شہ سرخیوں میں رھنے والا یہ پانچواں شیطان یعنی موجود خلیفہ اس وقت ایک پراسرار بیماری میں مبتلا ہوگیا ہے اور قادیانی قیادت نے اندر ہی اندر اپنے اگلے شیطان كى تلاش شروع کر دی ہے . لیکن شیطان کے مرنے کے بعد اس کی جگہ ایک اور شیطان ہی لیتا ھے نئے شیطان کی ابھی سے تلاش شروع کر دی گئی ہے

[12/15/20]   السلام علیکم ورحمتہ اللہ وبرکاتہ
کچھ دل کی بات
فتنہ قادیانیت کے بانی
ملعون مرزا مسرور کو کچھ عرصہ سے گوگل پذیرائی مل رہی ہے
اس کو گوگل نے مسلمانوں کا پانچواں خلیفہ نامزد کیا (جبکہ مسلمان تو ۔۔۔ ملعون مرزا غلام قادیانی پر بھی آج تک لعنت کرتے آرہے ہیں. تو اس کے خلیفہ کی کیا اوقات) جس کی وجہ سے مسلمانوں کے جذبات مشتعل ہوئے اور ہر مسلمان انفرادی طور پر گوگل پر جا کر فیڈ بیک دینے کے دوران ملعون مرزا مسرور کو لعن طعن کررہا ہے. ظاہر ہے اب ہم مسلمانوں کے پاس اتنی تو غیرت باقی ہے کہ ہم نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی ناموس اور شعار اسلام پر توہین قطعی برداشت نہیں کر سکتے
ایک وقت تھا جب مسلمان حکمران یہ فریضہ اداء کرتے تھے عام مسلمانوں کو اس کی ضرورت ہی نہیں تھی. نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی ذات اقدس پر حملہ کرنے والے گنتی کے بدبخت ہوتے تھے
پھر زمانہ بدل گیا حکمران بے حس ہوگئے پر غیرت مسلم ابھی زندہ ہے. انہوں نے ان بدبختوں کو واصل جہنم کیا دنیا میں غازی کے لقب حاصل کئے انکے جسد خاکی کو کاندھا دینے کے لیے شاعر مشرق جیسے لوگ رشک کرتے تھے
پھر ہمارا زمانہ آیا جو کہ شوشل میڈیا کا ہے علماء کرام سے عام مسلمانوں کو بدزن کرنے کا زمانہ علماء کی کردار کشی کا زمانہ گانے بجانے والوں کو عزت دینے کا زمانہ
یہ دین غریب الوطن ہوتا جا رہا ہے وہ نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کی نبوت پر ڈاکہ ڈالنے والا بدبخت مرزا غلام قادیانی کے ماننے والوں کی پشت پناہی دنیا کا ہر کافر اور مسلم دنیا کی حکمران کی خاموشی شامل ہے. شوشل میڈیا بھی پیش پیش ہے اس صورت حال میں ایک کمزور ہوتا مسلمان اپنی طرف سے ایک ادنیٰ سی کوشش کرتا ہے اپنے جذبات کا اظہار کرتا. اس کوشش میں بھی ہم دو حصوں میں بٹ جاتے ہیں کوئی کہتا ہے ایسا نہ کرو انکی ریٹنگ بڑھ رہی ہے. وہ یہی چاہتے ہیں کوئی اور طریقہ اختیار کرو پی ٹی اے کو انفارم کرو وہ ایکشن لے کوئی کچھ تو کوئی کچھ کہ رہا ہے
ارے اللہ کے بندوں نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے نام لینے والوں مجھے جواب دو کہ انکی ریٹنگ اگر ہوگی بھی تو گوگل کے پیچ پر جہاں ریٹنگ ہوگی وہاں لعنت کے انبار بھی لگے ہیں. یہ دنیاوی ریٹنگ ہے. پر ہم مسلمانوں کے پاس اب یہ کمزور جذبات ہی رہ گئے ہیں اپنے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم سے عقیدت اور اپنے اسلام کے دفاع پر یہاں بھی اگر ہم رک کر سوچنا شروع کر دیں کہ ایسا ہو جائے گا ویسا ہو جائے گا تو بتائیے کہ ہم کیسے اپنے اس دل کو سہارا دیں کہ اے دل ابھی سو جا منصوبہ ساز منصوبہ بنا رہے ہیں اور ہم انکو بھرپور جواب دیں گے.
ارے ٹھہرو پی ٹی اے ابھی بند کردے گی گوگل کو اور گوگل منت کر رہا ہوگا پاکستانی حکومت کی ۔۔۔ کہ خدارا ہم پر رحم کرے عالی جاہ ہم آئندہ ایسا نہیں کریں گے.
یہ کم بخت دل ان تسلیوں کو ماننے والا نہیں. معذرت کے ساتھ میں ان احباب سے گزارش کرتا ہوں کہ آپ کوئی ٹھوس دلیل لائیں کہ جو طریقہ اختیار کریں تو کفر پر ایسی ضرب پڑے کہ وہ بلبلا اٹھے ۔۔۔ ہے ایسی کوئی صورت ؟؟؟
ہے ایسا کوئی طریقہ ؟؟؟
میں منتظر ہوں
اے میرے رب
ہم کمزور ہیں لاچار ہیں
کفر کے پے در پے حملوں کی زد میں تیرے پیارے نبی کریم صلی اللہ علیہ وسلم کے دین کی دفاع کی کوشش کررہے ہیں.
اے ہمارے رب ہماری مدد فرما بے شک تو مدد کرنے والا ہے آمین ۔

Videos (show all)

عیسائیت چھوڑ کر اسلام قبول کرلیا

Telephone

Website

Address


Dora Sufaid Dheri Peshawar
Peshawar
25120
Other Religious Organizations in Peshawar (show all)
شوری اھل حدیث حسن خیل سب ڈویژن پشاور شوری اھل حدیث حسن خیل سب ڈویژن پشاور
Peshawar

همارا منشور قرآن و حديث کي دعوت و تبليغ

Sitaish.tv Sitaish.tv
Peshawar

sitaish tv is a channel that wining souls through worship and sharing of Words of God

Peshawar Muharram Peshawar Muharram
Peshawar

اس پیچ کے بنانے کا مقصد لوگوں تک پشاور میں ہونے والی مختلف محافل کی اپڈیٹس پہنچانا ہے۔ بالخصوص ان لوگوں تک جو دوسرے شہروں اور ممالک میں ہیں۔

Tawheed Tv Tawheed Tv
Peshawar, 23540

Islamic video clips ....DO SHARE AND LIKE OUR VIDEOS.NEED UR SUPPORT FOR THIS GOOD CAUSE..

عالمی مجلس تحفظ ختم نبوۃ یونین کونسل کنکولا عالمی مجلس تحفظ ختم نبوۃ یونین کونسل کنکولا
Dalazak Road Samar Bagh
Peshawar, 25000

Aalmi majlise tahafoze khatme nabuwat U/C Kankola

مدرسہ جامعہ اصحاب صفہ ۔ الحرم ماڈل ٹاون مدرسہ جامعہ اصحاب صفہ ۔ الحرم ماڈل ٹاون
Block A, St#2, Alharam Model Town Near Hayatabad Toll Plaza
Peshawar, 25100

Sheikh Inayat ullah Al Bajauri  الصفحة الرسمیه للشیخ عنای Sheikh Inayat ullah Al Bajauri الصفحة الرسمیه للشیخ عنای
Bajaur
Peshawar, 18650

د نورو بیانونو لپارہ زمونگہ یوٹوب چینل سبسکرائب کئے https://m.youtube.com/channel/UC-HcX5eKyolNh48HA2jPhIw

Iftikhar Islamic page Iftikhar Islamic page
Peshawar

ہمارے فیس بک پیج کو ضرور لائک کریں تاکہ آپ کو بیانات حمدونعت اور اسلامک ڈیٹا مل سکے شکریہ۔

Syedan Media Syedan Media
Peshawar

Syed's Family direct descendents of the Prophet Muhammad SAWW of Islam. The Prophet daughter's syeda Bibi Fatima R.A was married to Hazrat Ali R.A.

بزمِ مِيلادِ مُصطفےٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وس بزمِ مِيلادِ مُصطفےٰ صلی اللہ علیہ وآلہ وس
Awan-e-Meelad, Gulbahar # 3, Rasheed Town.
Peshawar, 25000

This is the Only "OFFICIAL" Page of Bazm-e-Meelad-e-Mustafa (SAWW), Peshawar, on Facebook.