Stones

Stones

Play Snooker at The SticksnStones. City's favorite hot spot! Located in beside Alankar Hotel, Opposite Main Power House, in the heart of Aurangabad.

StickNStones is proud to possess 4 snooker tables of Tournament Class and steel blocks with fine accuracy. The seating arrangements is meticulously designed for the comfort and ease of the spectators. There are seating arrangements on sides of the tables for the players to relax comfortably. The snooker tables are created catering to the international standards. The lively ambiance of the snooker

Operating as usual

#Episode018 #MilliVoice #DailyNewsBulletin ملی وائس عالمی شب و روز 16/02/2021

#Episode018 #MilliVoice #DailyNewsBulletin ملی وائس عالمی شب و روز

السلام علیکم و رحمۃ اللہ و برکاتہ۔
عالم اسلام کی مستند خبروں اور تجزیوں کے لئے MilliVoice کے یوٹیوب چینل کو لائک اور سبسکرائب کریں۔ بیل آئیکان ضرور دبائیں تاکہ نوٹیفکیشن ملتی رہے۔

https://youtu.be/YMonTWdLvvU

#Episode018 #MilliVoice #DailyNewsBulletin ملی وائس عالمی شب و روز MilliVoice strives to be the most credible and authentic source of information regarding Muslim Ummah and also tries to present a balanced perspective on con...

28/09/2020

MilliVoice

MilliVoice strives to be the most credible and authentic source of information regarding Muslim Ummah and also tries to present a balanced perspective on contemporary issues in the light of Quran and Sunnah.

01/05/2020

جناب شیخ بسم اللہ صاحب کا "صبرواستقامت" کے عنوان پر خطاب۔

رمضان الکریم کی مبارک ساعتوں سے استفادے کی غرض سے اور لاک ڈاؤن کے تناظر میں وحدت اسلامی کی جانب سے 3 رمضان تا 18 رمضان لائیو (فیسبک اور یوٹیوب کےلئے) پروگرام ترتیب دیا گیا ہے، اس سلسلہ میں 1 مئی بروز جمعہ، بوقت دوپہر 12:15بجے جناب شیخ بسم اللہ صاحب ’’صبرواستقامت‘‘ کے عنوان کے تحت خطاب فرمائیں گے۔
آپ تمام حضرات سے گذارش ہیکہ اس پوسٹ کو دوست و احباب کے استفادے کے لئے زیادہ سے زیادہ شیئر کریں۔ (جزاک اللہ)

30/04/2020

مولانا محمد نصیرالدین صاحب کا "ایمان و احتساب" کے عنوان پر خطاب۔

مولانا محمد نصیرالدین صاحب کا "ایمان و احتساب" کے عنوان پر خطاب۔
رمضان الکریم کی مبارک ساعتوں سے استفادے کی غرض سے اور لاک ڈاؤن کے تناظر میں وحدت اسلامی کی جانب سے 3 رمضان تا 18 رمضان لائیو پروگرام ترتیب دیا گیا ہے، اس سلسلہ میں 29 اپریل بروز بدھ، بوقت دوپہر 12:15بجے مولانا محمد نصیرالدین صاحب ’’ایمان و احتساب‘‘ کے عنوان کے تحت خطاب فرمائیں گے۔
آپ تمام حضرات سے گذارش ہیکہ وقت مقررہ پر فارغ اور آن لائن رہیں، اس پوسٹ کو دوست و احباب کے استفادے کے لئے زیادہ سے زیادہ شیئر کریں۔ (جزاک اللہ)

[04/29/20]   مولانا محمد نصیرالدین صاحب کا "ایمان و احتساب" کے عنوان پر خطاب۔
رمضان الکریم کی مبارک ساعتوں سے استفادے کی غرض سے اور لاک ڈاؤن کے تناظر میں وحدت اسلامی کی جانب سے 3 رمضان تا 18 رمضان لائیو پروگرام ترتیب دیا گیا ہے، اس سلسلہ میں 29 اپریل بروز بدھ، بوقت دوپہر 12:15بجے مولانا محمد نصیرالدین صاحب ’’ایمان و احتساب‘‘ کے عنوان کے تحت خطاب فرمائیں گے۔
آپ تمام حضرات سے گذارش ہیکہ وقت مقررہ پر فارغ اور آن لائن رہیں، اس پوسٹ کو دوست و احباب کے استفادے کے لئے زیادہ سے زیادہ شیئر کریں۔ (جزاک اللہ)

29/04/2020

جناب سالم صدیقی صاحب کا "قیام اللیل" کے عنوان پر خطاب۔

رمضان الکریم کی مبارک ساعتوں سے استفادے کی غرض سے اور لاک ڈاؤن کے تناظر میں وحدت اسلامی کی جانب سے 3 رمضان تا 18 رمضان لائیو پروگرام ترتیب دیا گیا ہے، اس سلسلہ میں 29 اپریل بروز بدھ، بوقت دوپہر 12:15بجے جناب سالم صدیقی صاحب ’’قیام اللیل‘‘ کے عنوان کے تحت خطاب فرمائیں گے۔
آپ تمام حضرات سے گذارش ہیکہ وقت مقررہ پر فارغ اور آن لائن رہیں، اس پوسٹ کو دوست و احباب کے استفادے کے لئے زیادہ سے زیادہ شیئر کریں۔ (جزاک اللہ)

[04/28/20]   رمضان الکریم کی مبارک ساعتوں سے استفادے کی غرض سے اور لاک ڈاؤن کے تناظر میں وحدت اسلامی کی جانب سے 3 رمضان تا 18 رمضان لائیو پروگرام ترتیب دیا گیا ہے، اس سلسلہ میں 29 اپریل بروز بدھ، بوقت دوپہر 12:15بجے جناب سالم صدیقی صاحب ’’قیام اللیل‘‘ کے عنوان کے تحت خطاب فرمائیں گے۔
آپ تمام حضرات سے گذارش ہیکہ وقت مقررہ پر فارغ اور آن لائن رہیں، اس پوسٹ کو دوست و احباب کے استفادے کے لئے زیادہ سے زیادہ شیئر کریں۔ (جزاک اللہ)

28/04/2020

مولانا جمیل صدیقی صاحب "صوم" کے عنوان پر خطاب فرما ئیں گے۔

رمضان الکریم کی مبارک ساعتوں سے استفادے کی غرض سے اور لاک ڈاؤن کے تناظر میں وحدت اسلامی کی جانب سے 3 رمضان تا 18 رمضان لائیو پروگرام ترتیب دیا گیا ہے، اس سلسلہ میں 28 اپریل بروز منگل، بوقت دوپہر 12:15بجے مولانا جمیل صدیقی صاحب ’’صوم‘‘ کے عنوان کے تحت خطاب فرمائیں گے۔
آپ تمام حضرات سے گذارش ہیکہ وقت مقررہ پر فارغ اور آن لائن رہیں، اس پوسٹ کو دوست و احباب کے استفادے کے لئے زیادہ سے زیادہ شیئر کریں۔ (جزاک اللہ)

[04/27/20]   رمضان الکریم کی مبارک ساعتوں سے استفادے کی غرض سے اور لاک ڈاؤن کے تناظر میں وحدت اسلامی کی جانب سے 3 رمضان تا 18 رمضان لائیو پروگرام ترتیب دیا گیا ہے، اس سلسلہ میں 28 اپریل بروز منگل، بوقت دوپہر 12:15بجے مولانا جمیل صدیقی صاحب ’’صوم‘‘ کے عنوان کے تحت خطاب فرمائیں گے۔
آپ تمام حضرات سے گذارش ہیکہ وقت مقررہ پر فارغ اور آن لائن رہیں، اس پوسٹ کو دوست و احباب کے استفادے کے لئے زیادہ سے زیادہ شیئر کریں۔ (جزاک اللہ)

27/04/2020

رمضان المبارک لائیو پروگرام بعنوان ’’قرآن ‘‘

رمضان الکریم کی مبارک ساعتوں سے استفادے کی غرض سے اور لاک ڈاؤن کے تناظر میں وحدت اسلامی کی جانب سے 3 رمضان تا 18 رمضان لائیو پروگرام ترتیب دیا گیا ہے، اس سلسلہ میں 27 اپریل بروز پیر، بوقت دوپہر 12:15بجے مولانا محمد مشتاق فلاحیؔ صاحب ’’قرآن‘‘ کے عنوان کے تحت گفتگو فرمائیں گے۔
آپ تمام حضرات سے گذارش ہیکہ وقت مقررہ پر فارغ اور آن لائن رہیں، اس پوسٹ کو دوست و احباب کے استفادے کے لئے زیادہ سے زیادہ شیئر کریں۔ (جزاک اللہ)

[04/25/20]   رمضان الکریم کی مبارک ساعتوں سے استفادے کی غرض سے اور لاک ڈاؤن کے تناظر میں وحدت اسلامی کی جانب سے 3 رمضان تا 18 رمضان لائیو پروگرام ترتیب دیا گیا ہے، اس سلسلہ میں 27 اپریل بروز پیر، بوقت دوپہر 12:15بجے مولانا محمد مشتاق فلاحیؔ صاحب ’’قرآن‘‘ کے عنوان کے تحت گفتگو فرمائیں گے۔
آپ تمام حضرات سے گذارش ہیکہ وقت مقررہ پر فارغ اور آن لائن رہیں، اس پوسٹ کو دوست و احباب کے استفادے کے لئے زیادہ سے زیادہ شیئر کریں۔ (جزاک اللہ)

22/10/2019

WahdatVision

آؤ ہم پہلے سے رہیں۔
-ضیاءالدین صدیقی ، اورنگ آباد
انتخابات آتے اور جاتے رہتے ہیں، بھارت میں شاید ہی کوئی ایسا موسم ہو جب کہیں نہ کہیں انتخابات نہ ہو تےرہے ہوں۔ ہریانہ اور مہاراشٹر کے بعد شاید اب دوسری ریاستوں کے در کھولے جائیں اور یو یہ سلسلہ کبھی ختم نہ ہوتے ہوئے چلتا ہی رہتا ہے۔ بھارت نے اپنے طرز حکومت کے لیے جو طریقہ انتخاب اپنایا ہے وہ پارلیمانی طرز انتخابات ہیں۔ امریکہ اور بعض مغربی ممالک صدارتی طرز انتخاب کو پسند کرتے ہیں، جمہوریت بنیادی طور پر مغربی طرز حکومت کا تجرباتی عکس ہے جسے افلاطون نے اپنی شہری حکومت کے آئینے میں تصویر نما ہیولہ بنا کر لوگوں کے لیے پیش کیا۔ اب یہ تصور حکومت خاصہ قدآور اور تناور ہوچکا ہے، بیشتر ریاستیں اسی طرز حکومت کو اپناتی ہیں۔
اس طرز حکومت کو وجود میں لانے کے لیے جو طریقہ اختیار کیا جاتا ہے جسے ہم الیکشن کہتے ہیں یہ اس گلاس کی طرح ہے جس کا استعمال شربت پینے کے لیے بھی ہوسکتا ہے اور اس سے شراب نوشی بھی کی جاسکتی ہے۔ ریاست اس جام سبو سے کون سی محفل سجانا چاہتی ہیں یہ ان کے ویژن، عقیدہ، نظریہ و افکار پر منحصر ہوتا ہے۔ مہاراشٹر میں ووٹ ڈالے جا رہے ہیں، اب تک سیاسی پارٹیاں انتخابات میں مسلمانوں کے ووٹ کو "بندھوا ووٹ" سمجھ کر ایک "رویہ" اختیار کیے ہوئے تھیں جیسے کسی زمانے میں کانگریس کی سمجھ تھی۔
گلی در گلی اور چوراہے ہی نہیں مساجد کے ممبر بھی بے آبرو کیے گئے یہ بتلانے کے لئے کہ مسلمان "امانت"، "شہادت" کا خاص خیال رکھیں۔ امانت کیا ہے شہادت کسے کہتے ہیں اس کی تشریح ممبرومحراب سے آج سے پہلے اتنی شدت سے نہیں ہوئی جو اس موسم میں ہو رہی ہیں اسی کے ساتھ انتخابی موسم میں ان الفاظ پر محیط فتاوے ضرور عام ہوئے ہیں، ہمارا کہنا ہے آپ جس محاذ جنگ میں کودیں ہوئے ہیں اسے اچھی طرح سے لڑیں۔ اسلامی اصطلاحات کو کیوں بے آبرو کر رہیں ہو۔ شہادت، امانت والے تمام فتاوٰی پاکستان کے پس منظر میں دیئے گئے ہیں جہاں 90 فیصد مسلمان رہتے ہیں اور جہاں کا دستور کلمہ پڑھ کر مسلمان ہوا ہے۔ ہم اپنی امانتیں و شہادتیں کن کے قدموں میں میں نچھاور کرتے ہیں جو نظام مبنی بر اسلام نہیں ہے۔ امانت و شہادت کے فتاوٰی پاکستان میں شربت نوشی کے لئے دیئے جاتے ہیں لیکن حالت کے بدلنے سے احکامات بھی بدلتے ہیں وہی فتوٰی شراب کے استعمال میں کیسے چلایا جا سکتا ہے یہ سمجھنے کی ضرورت ہے۔ اہل علم غور فرمائیں۔
ووٹوں سے بھری ہوئی EVM ابھی مقفل بھی نہیں ہونے پائی تھی کہ شہر کے کٹ کٹ گیٹ علاقے میں سر بازار مسلمانوں کے دو بڑے اشخاص میں تو تو میں میں ہوئی اور بات ہاتھا پائی تک جا پہنچی ۔ حضور اکرم ﷺ نے فرمایا ’’کسی مسلمان کو گالی دینا فسق ہے اور اس کا قتل کفرہے۔ ‘‘ بڑوں کی ہاتھا پائی ‘ چھوٹوں کے لئے اعلان جنگ نہ بن جائیں ۔ برسوںسے شہر اورنگ آباد مسلمانوں کے اتحاد وو اتفاق کی نظیر بنا ہوا تھا لیکن اب انتخابات کی نذر ہو گیا۔ دشمن متحد ہورہے ہیں اور ہمارے بھائی ایکدوسرے کے دشمن ، اگر یہی صلہ ہے ان انتخابات کا تو امت کو اپنے خود ساختہ اتحاد کی فکر تو کرنی ہی پڑے گی۔
خیر پہلوانوں کی دنگل سے واپسی ہورہی ہے۔ ایک دوسرے پرخوب گرجے اور برسے ہیں، تہمتیں، بہتان والزامات، بے وفائیاں اور جفا کی داستانیں زبان زد عام ہوتی رہیں۔ ایک دوسرے سے دوریاں بڑھا کر ایک دوسرے کے لباس کو تار تار کیا جاتا رہا۔ کہے ہوئے جملوں کا جواب در جواب وسوال در سوالات کی بوچھاڑ تھی جنہیں عوام سنتی رہی۔ یہ ہمارا معاشرہ ہے! جن کے کپڑوں کو سربازار اتارا جاتا ہے، ہوسکتا ہے باتیں صحیح ہو لیکن جھوٹ اور بہتان کا بھی سہارا لیا جاتا ہے، اور انہی میں سے ایک "دنگل" جیت جاتا ہے۔ مہینے بھر جس کی آبرو راستوں اور گلی کوچوں میں لٹتی پیٹتی رہی وہ ذی اقتدار مانا جاتا ہے۔ اب لوگ اس کی عزت و توقیر شروع کرتے ہیں جن کے بارے میں ہفتوں غلط سنتے رہیں۔ہاں! یہ ہمارا معاشرہ ہے اور اسے ہم نے ہی بنایا ہے۔
کیا اس "دنگل" کے گھاؤ جن زبانوں سے لگائے گئے ہیں وہ بھر جائیں گے۔ سنا تو یہی ہے کہ جسم کے زخم بھر جاتے ہیں لیکن زبان کے دیے ہوئے زخم ہمیشہ ہرے رہتے ہیں۔ کیا ہم گزشتہ ماہ کی ایک ایک بات بھول جائیں گے۔ گلی کوچوں میں ہلہ بول پکارتے ہوئے نوعمروں کو بڑھاپے تک شاید یہ باتیں یاد آئیں۔کیا ہم ایک دوسرے کے خلاف کہے ہوئے الزامات، بہتان، جھوٹ اور نیچا دکھانے کے لیے کی گئی کبر زدہ حرکات پر اپنے رب سے معافی مانگیں گے؟ گلی کوچوں میں نہیں اکیلی ہی صحیح اپنے رب سے اپنے زیادتیوں، بیجا حرکتوں، غیر اخلاقی رویوں اور ناجائز اصراف پر اپنے رب سے عفو و درگزر کا طالب بنیں گے؟
ہم تمام سے استدعا کرتے ہیں جہاں تک آواز جاسکتی ہے، اپنے گریبان میں جھانک کر دیکھیں، کیا کیا ہے؟ کیا کہا ہے؟ غور کریں اگر دل میں ذرا بھر بھی بے چینی ہو تو اپنے رب سے معافی مانگیں کیونکہ وہی سب سے بڑا معاف کرنے والا اور عفو درگزر کرنے والا پالنہار ہے۔ جن جن کے دل دکھے ہے ان سے مل کر رنجشوں کو دور کر لینا آخرت میں پریشانی سے بچا جا سکتا ہے۔ آؤ! ہم پہلے سے رہیں!!! اور دل کے اطمینان کے ساتھ جئیں، کوئی رنجش، کوئی کدورت نہ کوئی کبر ہمارے رویہ سے جھلکتا ہوں۔اور نہ اس کا اعادہ ہو۔کیا ہم ایسا کر سکتے ہیں؟ اپنی ملت کے لئے، خود اپنے لئے اور اپنے آخرت کے لئے تو ضرور بضرور کریں۔
اللہ ہمارا حامی و ناصرہو۔

#WahdatVision #MilliVoice #Ittehad #MIM #NCP #Aurangabad

19/06/2019

https://www.facebook.com/story.php?story_fbid=1043124649214400&id=997762130417319

شہید محمد مرسی المصری زندہ ہے!!!
تاریخ مصر میں پہلی دفعہ عوامی نمائندے کی حیثیت سے منتخب ہونے والے محمد مرسی عیسیٰ العیاط المصری اولین صدر ہے۔ یوں تو صدارتی فہرست میں وہ مصر کے پانچویں صدر تھے لیکن عوامی منتخب امیدوار کی حیثیت سے وہ مصر کے پہلے صدر تھے۔17 جون 2019 کی شام الجزیرہ و مصر کی سرکاری اطلاعاتی ایجنسیوں نے دنیا کو مطلع کیا کہ محمد مرسی معزول صدرِ مصر اب اس دنیا میں نہیں رہے، بعض اطلاعات کے مطابق انھیں پیشی کے لیے عدالت لایا گیا تھا، جہاں انہوں نے ۲۰؍منٹ تک عدالت میں ہی اپنا بیان دیا جو فکری ،جذباتی و موجودہ حالات کے پس منظر میں نہایت اہم تھا ،بتایا جاتا ہے کہ بیان کی فوری بعد وہ گر پڑے اور اسپتال لے جاتے ہوئے راستے ہی میں ان کا انتقال ہوگیا ۔شوگر کے مریض تھے ‘حرکت قلب بند ہو نے کی وجہ جاں بحق ہوگئے۔ ترکی کے صدر رجب طیب اردگان نے انہیں صحیح خراج عقیدت پیش کیا ہے ،یہ کہتے ہوئے کہ’’ وہ شہید ہوئے ہیں، شہید مردہ نہیں ہوتے ،اپنے فکر، اپنی قربانیوں اور اپنی سرگرمیوں کی وجہ سے وہ ہمیشہ زندہ رہتے ہیں ،قرآن نے تو انہیں رزق پہنچانے کی بات کہی ہے جس کا شعور ہم لوگ نہیں کر سکتے‘‘۔
محمد مرسی 20 اگست 1951 میں مصر کے ضلع شرقیہ کے ایک دیہات میں پیدا ہوئے ۔بچپن ہی میں انھیں قرآن حفظ کروایا گیا تھا۔ قاہرہ یونیورسٹی سے انہوں نے 1978 میں انجینئرنگ کی ڈگری حاصل کی، اور 1982میں یونیورسٹی آف ساؤدرن (کیلیفورنیا )سے پی ایچ ڈی کرتے ہوئے ڈاکٹریٹ کی ڈگری حاصل کی۔
بعد ازاں وہ مصر واپس لوٹے اور شرقیہ کی یونیورسٹی میں بحثیت استاد اپنی خدمات انجام دیں ،محمّد مرسی عربی اور انگریزی دونوں زبانوں پر عبور رکھتے تھے ۔2000 سے 2005 کے درمیان مصری پارلیمنٹ میں وہ اخوان المسلمین کے نمائندے رہے ،اس کے بعد سات سال کے لیے جیل میں ڈال دیئے گئے ،2011 میں جب بہارعرب کی شروعات تیونس سے ہوئی تو مصر بھی اپنی حالات کا شکار ہو چکا تھا ، یہاں بھی ۳۰؍ سالوں سے اقتدار پر بیٹھے ہوئے حسنی مبارک کے خلاف عوامی غصہ تحریک و مظاہروں کی شکل میں سامنے آ یا، بظاہر اس کی قیادت کسی کے ہاتھ میں نہ تھی لیکن اندرونی معاملات کا پورا نظم اخوان المسلمین نے سنبھال رکھا تھا ۔
۳۰؍ سالہ اقتدار کے بعد حسنی مبارک کا دور ختم ہوا اور مصری عوام کو اس میں کامیابی ملی ۔اخوان المسلمون نے الیکشن کے لیے ایک سیاسی پارٹی تشکیل دی جس کا نام انہوں نے حزب الحریت والعدل (فریڈم اینڈ جسٹس پارٹی )رکھا۔ اس کے رئیس کی حیثیت سے محمد مرسی کو نامزد کیا گیا ۔
حسنی مبارک کے بعد 23 مئی 2012 کو الیکشن کا پہلا دور منعقد ہوا ۔جس میں محمد مرسی اور سابق وزیراعظم احمد شفیق کو سب سے زیادہ ووٹ حاصل ہوئے ۔کیونکہ مصری الیکشن پروسس پیچیدہ رکھا گیا ہے ،دوسرے مرحلے میں احمد شفیق کے مقابلے میں محمد مرسی کو 51.70فیصد ووٹ ملے تھے جس کی وجہ سے محمد مرسی کو پہلے منتخب صدر کی حیثیت سے تسلیم کیا گیا ۔محمد مرسی نے 30 جون 2012 سے اقتدار سنبھالا،کچھ بنیادی اصطلاحات کی جانب توجہ دیں اور اسی دوران بیرونی ممالک کے دورے بھی کیے۔25 دسمبر 2012 کو ’اسلامی دستور ‘پر مصری عوام کے درمیان ریفرنڈم کروایا گیا ،جس میں اکثریت نے شرعی حکومت بنانے کے لیے اسلامی دستور کے حق میں اپنی رائے دیں،جس کی وجہ سے محمد مرسی اور اخوان المسلمین کی حیثیت مضبوط ہوئی ۔امریکہ ، یوروپ واسرائیل اور بعض مسلم ممالک جیسے سعودی عربیہ اور یو اے نے عبدالفتاح السیسی کا ساتھ دے کر فوجی بغاوت کروائی اور عوامی منتخب صدر کو معزول کر دیا گیا ۔ محمد مرسی 3 جولائی 2013 کو معزول کر دیے گئے۔
ایک ایمان والے کا قتل ‘انسانیت کا قتل ہے اور کعبے کی حرمت سے بڑھ کر اس کی جان وآبرو محترم ہے، لیکن ایک اسلامی ملک جس کادستور شریعت کی بنیاد پر بنایا گیا ہوں ،اس کا قتل کتنا بھیانک ہو سکتا ہے غور کرنے کی بات ہے۔ایسی ہی حرکت پاکستان نے افغانستا ن کی اسلامی حکومت کو ختم کرکے اپنے مغربی آقاؤں کو خوش کیا تھا ۔
معیشت اور حکومت میں اخوان کے اثرات اور انسانی حقوق کی پامالی کو بنیاد بنا کر ’تمرد‘ بغاوت کی مہم چلائے گئی۔ جس میں مصری عوام کو شامل کیا گیا ، اور منتخب صدر کو معزول کر دیا گیا ۔معزولی کے خلاف اخوان المسلمین اور دیگر اسلام پسندوںنے فوج اور اس کے سربراہ عبدالفتاح السیسی کی ان حرکات کو بنیاد بناکر مظاہروں کا سلسلہ شروع کیا ۔رابعہ عدویہ کے چوراہے پر حکومت نے سیدھی گولی باری کی جس کی وجہ سے سرکاری اعداد و شمار کے مطابق 1000 افراد جاں بحق ہوئے اور غیر سرکاری تعداد تین ہزار سے زائد کے شہید ہونے کی ہے ۔یہ واقعہ 14 اگست 2013 کا ہے ۔معزولی کے بعد محمد مرسی کو چار ماہ قید میں کہا رکھا گیا اس کا علم کسی کو نہ تھا، البتہ بعد میں ان پر فرد جرم عائد کی گئی ،الزامات میں 2011 جیل توڑنے اور فساد پھیلانے پر 16 مئی 2014 کو سزائے موت سنائی گئی ۔قطر کے لیے جاسوسی کرنے کا ایک مقدمہ بھی چلایا جا رہا ہے مختلف الزامات کے مقدمات میں 4 مرتبہ سزائے موت اور 2مرتبہ عمر قید کی سزا پا رہے محمد مرسی کو اس وقت راحت ملی جب کہ مفتی اعظم مصر نے ان سزا ؤں کو کالعدم قرار دے دیا۔
دیگر اور مقدمات میں ۲۰ ۔ ۲۰سال کی سزا ئیں بھی سنائی گئی تھی ،17جون 2019 کو عدالت میں پیشی ‘اس مقدمے کی تھی جس میں قطر کے لیے جاسوسی کا الزام محمد موسی پر لگایا گیا تھا ۔اس مقدمے کے دوران انہوں نے ۲۰؍ منٹ گفتگو کی اور وہیں پر گرپڑے ،ہسپتال لے جاتے ہوئے ہوئے راستے ہی میں ان کا انتقال ہوگیا ۔مرسی کے جنازے کو خاندان کے حوالے نہیں کیا گیا ،بلکہ صرف لڑکوں کو اجازت دی گئی اور خاموشی سے عوامی قبرستان میں تدفین کا فیصلہ کیا گیا ۔یہاں تک کہ محمد مرسی کی اہلیہ نگلہ علی محمود کو بھی اجازت نہیں دی گئی کہ وہ جنازے کے قریب آسکے۔محمد مرسی المصری اخوان المسلمین کا وہ مرد مجاہد ہے جس نے آخری وقت تک اپنی فکر اور اپنے مقصد کے لیے جدوجہد جاری رکھیں ۔ وہ عالمی طاغوت کی سازش کا شکار ضرور ہوئے لیکن اپنی سوچ و فکر سے بغاوت نہیں کی ۔جیل کے اندر رہتے ہوئے انہوں نے اخوان المسلمین کا حوصلہ بنائے رکھا تھا اور جب کہ انہیں موت نے ہم آغوش کر رکھا ہے تو مزید حوصلوں اور ہمتوں کی سوغات مصری عوام کا نصیب بن چکی ہے ۔محمد مرسی کی شہادت سید قطب ،عبدالرؤف رائف کے جیسے نہ صحیح لیکن فی سبیل اللہ ان کی موت ہوئی ہے ،اس لیے وہ اس راہ کے شہید کہلائیں گے ۔
محمد مرسی کی پہلی عوامی تقریر،UNO میں ابتدائی گفتگو ،دیگر ممالک میں جا کر ہم فکر لوگوں سے ملاقاتیںاس بات کی گواہی دیں گی کہ محمد مرسی نے اپنی فکر اور نصب العین سے ذرہ برابر انحراف نہیں کیا۔ اقتدار کا نشہ انہیں دوسرے راستے نہ دکھلا سکا اور نہ جیل کی سلاخوں نے ان کی ہمتوں اور حوصلوں کو پست کیا ۔ایسے لوگوں سے قومیں زندہ رہتی ہے اور انقلابی فکر و نظر کے آ بیاری ہوتی ہے ۔ اخوان کی منتخب حکومت کو معزول کر دینے کے باوجود اخوان المسلمین نے طاقت کے استعمال سے اجتناب برتا اور کہا کہ ’’ہمارا ہاتھ نہ اٹھانا ہی ہماری طاقت ہے ،ہم آدم ؐکے اس بیٹے کی مثال قائم کرنا چاہتے ہیں جس نے اپنے بھائی پر ہاتھ نہیں اٹھایا بلکہ قتل ہونے کو ترجیح دیں ۔‘‘ ایسی سوچ و فکر کے حامل جماعت کو امریکہ اب دہشت گرد قرار دینا چاہتا ہے ۔جس کے بارے میں محمد بن سلمان نے یہ بات کہی ہے کہ’’ خلیج میں تناؤ کے تین محورہے اخوان، ایران اور داعش ۔‘‘محمد بن سلمان خود کیا کر رہے ہیں انہیں بتلانے کی ضرورت نہیں ۔ اپنے آقا امریکہ اور اپنے دوست اسرائیل کے اشاروں پر اصلاحات کی جو جھڑی لگا دی گئی ہے اس ضمن میں مزید اور کیا کہا جا سکتا ہے ۔ ؎حرم رسوا ہے پیر حرم کی کم نگاہی سے
اے شہیدمرسی ! ہم گواہی دیتے ہیں کہ تم نے اللہ کی رضا و آخرت کی فلاح کے لیے اقتدار سنبھالاتھا اور اس کے لئے جیل کی سلاخوں کو قبول کیا اور اسی راہ میں اپنی جان دے دیں ۔ہم گواہ ہے ! اے مرسی ہم گواہ ہے !!تم زندہ ہو تمہیں موت نہیں آئی ہے ،تم تو ہم سے جدا ہوئے ہو۔

ضیاء الدین صدیقی (اورنگ آباد)
معتمد عمومی، وحدت اسلامی ہند

#Mursi #WhahdatVision #WV21 #Islam #Muslims

26/12/2018

Desis App

Best School Information Software in India
Manage Auto Generate Exam Result, Attendance, Fees, Homework, Announcements, Live messages, Bulk SMS & e-mails and much more
@ just Rs. 49/- per student per year only.
Call us at : 1800 123 231 231
write us at : [email protected]

27/11/2018

Desis App

A Complete Interactive School Communication Platform.

#DesisApp #school #DezinEdge #communication #Interactive #students #teachers #parenting #teachermom #DesisSchoolApp #Software

Call us @ 093712 31231
Visit us @ http://www.de-sis.com/

16/02/2018

https://www.facebook.com/DesisAppOfficial/posts/158906504903637

A Complete Interactive School Communication Platform. #Software #Application #DesisParentApp #DesisSchoolApp #DesisApp #Designed #Better #GetItOnGooglePlay #DezinEdge
Website - http://www.dezinedge.com/
Call Us - +919371 231 231
Write Us - [email protected]

Our Story

The FortView Resorts is located in a natural Scenic beauty and very close to the world heritage Ellora and within the periphery of the historical Deogiri Fort. Catering to the national & international standards of worldwide Tourists to enjoy the necklace beauty added by a range of mountains having variety of flora & fauna giving a mental peace just 15 km. away from Industrial Crowdedness of Aurangabad city. A place for relief from mental fatigue & physical stress. The concept of Fortview Resort is unique because of its eco-friendly concepts to preserve the natural environment.

It’s a good recreation point for school kids, collegians, Families, Friends, Corporate Executives, Doctors and business class with ultra luxurious facilities with cost effective tariff where in we are pleased to provide facilities like Super Deluxe Rooms, Duplex, Mega Swimming pool, Play Grounds, Lawns, Indoor & Outdoor Adventure Sports & a suitable place for wide-range of trainings & Conferences. so come... rejuvenate yourself!!!

WE OFFER :-

1) FOOD ZONE (PURE VEG)

Videos (show all)

جناب شیخ بسم اللہ صاحب کا "صبرواستقامت" کے عنوان پر خطاب۔
مولانا محمد نصیرالدین صاحب کا "ایمان و احتساب" کے عنوان پر خطاب۔
جناب سالم صدیقی صاحب کا "قیام اللیل" کے عنوان پر خطاب۔
مولانا جمیل صدیقی صاحب "صوم" کے عنوان پر خطاب فرما ئیں گے۔
رمضان المبارک لائیو پروگرام بعنوان ’’قرآن ‘‘

Telephone

Address


Beside H2O Water Park, Near Daultabad Fort At Post Daultabad.
Aurangabad
431001
Other Aurangabad bars and pubs (show all)
Indiana snooker club Indiana snooker club
Himayat Baugh
Aurangabad, 431001

My Aurangabad My Aurangabad
Aurangabad, 431001

हे पेज फक्त औरंगाबाद मध्ये राहणाऱ्या फेसबुक युजर साठी आहे

Sky Grill Roof Top Sky Grill Roof Top
4 Town Centre, Jalna Road Cidco, Near Automotive & HP Pump Aurangabad - 431003 Maharashtra, India.
Aurangabad, 431003

Our RoofTop open air restaurant specialises in live barbeque with an amalgamation of spice & sauces,handi biryani,tangy curries,authentic salads &deserts.

संभाजीनगरचा गणेशोत्सव संभाजीनगरचा गणेशोत्सव
Sambhaji Nagar
Aurangabad, 431001

Aurangabad च्या सर्व गणपतींचे दर्शन ईथे मिळेल

Lotus Resort & Lawns Lotus Resort & Lawns
NH 211 Ellora Road, Next To H2O Waterpark, Opposite Daultabad Fort
Aurangabad, 431002

Lotus resort is located just 15 kms from Ellora Caves and City center of Aurangabad. The Resort has 18 Rooms, 3 Lawns, AC Banquet Hall, Swimming Pool, Waterpark, Restaurant & Bar. The Property is spread over 5 Acres.

Hotel Kohinoor Plaza Hotel Kohinoor Plaza
Opp. M.P Law College, New Samartha Nagar Road
Aurangabad, 431001

The Hotel Kohinoor Plaza most renowned 3 star luxury hotel situated in the historical city of Aurangabad, that offers impeccable hospitality services.

FUN Unlimited FUN Unlimited
NEW
Aurangabad, 431001

Verified

SHAIL SHAIL
Shail Cafe, Bhanudas Sabhahgrah Railway Station Road, Rachanakar Colony, New Usmanpura, Aurangabad, Maharashtra
Aurangabad, 431005

Shail Cafe & Sports Bar is where your search for Finest Craft Beer, Delicious Food & Best (Drinks) Brands in Aurangabad ends. Do chill out with friends apart from enjoying every Sports event on live screen

Green Park restro and lounge Green Park restro and lounge
Near MGM Hospital, Seven Hills, Jalna Road.
Aurangabad, 431001

Hotel Moraya Lodging, Restaurant and Bar Hotel Moraya Lodging, Restaurant and Bar
X-39, Meenatai Thakrey Market, Maharana Pratap Chowk, Bajaj Nagar,waluj MIDC
Aurangabad, 431136

best hotel for family and corporate people.... kitty party , birthday party, family get together etc.

Billiards and Snooker Association of Aurangabad Billiards and Snooker Association of Aurangabad
Gajanan Maharaj Mandir
Aurangabad, 431005

Red Triangle

MYTH Bar & Restaurant MYTH Bar & Restaurant
Myth Bar & Restaurant, Opposite Madhuban Hotel, Beed Bypass
Aurangabad, 431001

There's always something to celebrate